Sunday | 25 August 2019 | 24 Dhul-Hajj 1440

Fatwa Answer

Question ID: 255 Category: Worship
Correct Timing for Starting Fasting and Praying Fajr Salah

Assalamualaikum Warahmatullahi Wabarakatuhu, 

I live in Peoria, IL and there are 2 masjids and a musalla here. The masjid issues a Ramadan Salah timings calender in which the Fajr / Suhoor end time is 4:15 am whereas according to the calculation of the same in the Muslim Pro mobile application through Islamic University, Karachi, it is 3:45 am. So there is a difference of approximately 30 mins in both of the timings. Please let me know which timings to follow. 

Jazakallah Khair

الجواب وباللہ التوفیق 

The actual calculation of timings is done with the astronomical signs which have been mentioned in the Qur’an, Hadith and the books of fiqh. Utilizing this information, the computer applications and software is delevoped. One who is not familiar with these signs and the detailed knowledge is bound to depend upon and take help from such software applications. It should be clearly noted that all these software applications or almanacs are all estimated and based on assumptions and should not be considered definite and absolute. In other words, the timings written in them are not 100% confirmed rather these things are considered as tools to provide us benefits benefits such as convenience and close approximation. Today there is guidance available on the internet for the correct timings for every place in the world and the timings of salat for every place can easily be found. In addition, guidance can be taken from the experts in the fields of meteorology to find resolution of such issues. Therefore, one should contact a local madrasah or reputable ulamah kiram for finding a resolution to these issues and practice according to the guidance provided by them. (مستفاد: فتاویٰ محمودیہ ۹؍۷۱-۷۳ میرٹھ)

فینبغي الاعتماد في أوقات الصلاۃ وفي القبلۃ علی ما ذکرہ العلماء الثقات في کتب المواقیت، وعلی ما وضعوہ لہا من الآلات کالربع والاصطرلاب، فإنہا و إن لم تفد الیقین، تفید غلبۃ الظن للعالم بہا، وغلبۃ الظن کافیۃ في ذٰلک۔

(شامي ۱؍۴۳۱ کراچی)

واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 255 Category: Worship
روزہ رکھنے اور فجر کے صحیح وقت کا تعین

 

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

میرا تعلق الی نوائے کے علاقے پی اوریا سے ہے۔ یہاں ۲ مساجد اور مصلے ہیں۔ مسجد میں جو نماز کے اوقات ماہ رمضان کے لئے تقسیم کئے گئے ہیں  اس میں  فحر/سحری کا وقت ۴:۱۵پر  ختم ہو رہا ہے، جبکہ مسلم پرو نامی ایپلیکیشن کے تخمینے کے مطابق وقت (جس میں اسلامک یونیورسٹی کراچی کا میتھڈ سلیکٹڈ ہے) ۳:۴۵ بتایا جا رہا ہے۔یعنی دونوں اوقات میں قریب ۳۰ منٹ کا فرق ہے۔ براہ کرم یہ بتا دیں کہ کس وقت  کو صحیح سمجھ کر اس پر چلنا چاہئے؟جزاک اللہ خیرا۔

 

الجواب وباللہ التوفیق

در اصل اوقات کی علامات سماویہ  سے کی جاتی ہے، جو قرآن و حدیث اور کتب فقہ میں مذکور ہے،اوران علامتوں سے ایپلیکیشن اور سافٹ ویر بنائے جاتے ہیں،اب جس کو ان علامات سے واقفیت نہ ہو وہ ان سافٹ ویرس وغیرہ پر اعتماد کرنے پر مجبور ہوجاتا ہےاور ان کا سہارا لیتا ہے، لیکن جتنے سافٹ ویر یا اپلیکیشن یا جنتریاں ہوتی ہیں وہ سب ظنی وتخمینی ہوتی ہیں، قطعی ویقینی نہیں ہوتیں، یعنی اُن میں درج  اوقات سو فیصد قطعی ویقینی نہیں ہوتے،بس یہ چیزیں سہولت اور ظن غالب کا فائدہ دیتی ہیں،اور آج کل انٹرنیٹ پر پوری دنیا کے تقریباً ہر مقام کے لئے صحیح اوقات کی رہنمائی موجود ہے،اورہر جگہ کے اوقات الصلوٰۃ بآسانی معلوم کئے جاسکتے ہیں، اورمحکمہ موسمیات سے بھی ان مسائل میں تحقیق کی جاسکتی ہے، اس لئے ان چیزوں کو سامنے رکھ کراپنے علاقہ کے کسی دینی مدرسہ یا اہل حق معتبر علماء سے رابطہ کرکے ان کی بتائے ہوئے اوقات صلاۃاور تحقیق پر سب عمل کرلیں تو مناسب رہے گا۔(مستفاد: فتاویٰ محمودیہ ۹؍۷۱-۷۳ میرٹھ)

فینبغي الاعتماد في أوقات الصلاۃ وفي القبلۃ علی ما ذکرہ العلماء الثقات في کتب المواقیت، وعلی ما وضعوہ لہا من الآلات کالربع والاصطرلاب، فإنہا و إن لم تفد الیقین، تفید غلبۃ الظن للعالم بہا، وغلبۃ الظن کافیۃ في ذٰلک۔

(شامي ۱؍۴۳۱ کراچی)

فقط واللہ اعلم بالصواب