Wednesday | 07 December 2022 | 12 Jamadiul-Awal 1444
Gold NisabSilver NisabMahr Fatimi
$4981.5$436.47$1091.18

Fatwa Answer

Question ID: 32 Category: Miscellaneous
Obeying the Parents

Assalamualaikum Warahmatullah

We are 4 sisters, we had one (youngest) brother who passed away 6 months back, he was a very good kid and used to take care of all of us including our parents, very much. For some reason our mother never loved him, so much so that she did not even talk to him properly, especially since he had gotten married, my mother and father completely changed and fought with him all the time. My parents would defame him in front of other family members, if we sisters spoke to him nicely, they got mad on us. Even on the day when he had the heart attack my mother was angry at him, he used to ask me that since he kept all the family members including his wife and kids happy and had not done anything wrong, why did mom treat him this way. After he died, my mother now says that she does not have any complaints against him and that he was a good son. My bhabi (sister in law) and my brother's 3 kids, lived with my mother and father after my brother's death. My mother used to fight with our bhabi (sister in law) all the time, from the third day of my brother's death they started fighting again and even after much mediation they did not change, so bhabi and her kids left. My mother told us that she hates our father too. My elder sister then started living with my mother and father but now my mother started behaving badly towards my sister so much so that she has separated her kitchen and food with her. Mufti sahib, we all love our mother very much, she was not like this before, she used to be like our friends, but she fights with everyone all the time now. She fights with all her daughters and leaves the house without informing anyone. Our father then tries to find her and brings her back to the house. Fights have started in my sisters' homes as well and their husbands have started making comments about this whole situation as well. Please tell us something which will bring peace and serenity in our house.

JazakAllah Khair

الجواب و باللہ التوفیق

Assalamualaikum Warahmatullah Wabarakatuh

No matter how angry one's parents become, one should always keep a demeanor which is full of love, kindness and etiquettes and should always care about their needs. You should create an atompshere of ta'leem in your house. In addition you should read the following 786 times and blow it on water or sugar and feed it to your parents:

بسم اللہ الرحمن الرحیم

Also, during your normal tasks of a day, keep on reading the following:

یا سبوح یا قدوس یا غفور یا ودود

فقط واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 32 Category: Miscellaneous
والدین کی فرمانبرداری

 

 

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

ہم چار بہنیں ہیں، ہمار ا ایک سب سے چھوٹا بھائی تھا جو ۶ مہینے قبل انتقال کر گیا، وہ بہت اچھا لڑکا تھا اور ہم سب بہنوں اور اپنے ماں باپ کا بہت خیال رکھتا تھا۔ نہ جانے کیوں ہماری والدہ اس سے کبھی خوش نہیں رہتی تھیں، حتی کہ اس سے سیدھے منہ بات تک نہ کرتیں، خاص کر جب سے اس کی شادی ہوئی تھی۔ میرے والدین اس کی شادی کے بعد سے بالکل بدل گئے ، اس سے ہر وقت لڑتے رہتے تھے، خاندان کے دوسرے لوگوں کے سامنے اس کی برائیاں بھی کرتے تھے۔ اگر ہم بہنیں اس سے پیار سے بات کر لیتیں تو وہ ہم سے بھی ناراض ہو جاتے ۔ اس کےانتقال کے روز جب اس کو ہارٹ اٹیک ہوا، اس دن بھی امی اس سے ناراض ہی تھیں۔ وہ ہم سے پوچھتا تھا کہ میں اپنے بیوی بچوں بہنوں اور ماں باپ کو خوش رکھنے کی ہر ممکن کوشش کرتا ہوں ، اور میں نے کچھ ایسا غلط نہیں کیا، پھر بھی ماں مجھ سے کیوں ناراض رہتی ہے؟ اس کے انتقال کے بعد اب امی یہ کہتی ہیں کہ ان کو اپنے بیٹے سے کوئی شکوہ نہیں اور وہ ایک اچھا بیٹا تھا۔ ہمارے بھابھی اور بھائی کے تین بچے انتقال کے بعد ہمارے امی ابو کے ساتھ رہ رہے تھے، امی ان سے بھی ہر وقت لڑتی رہتی تھیں اور انتقال کے تیسرے روز سے یہ لڑائیاں پھر شروع ہو گئیں۔ ہمارے دونوں کو سمجھانے کے باوجود یہ لڑائیاں چلتی رہیں، بھابھی اور بچے گھر چھوڑ کر چلے گئے۔ ہمارے والدہ نے ہمیں یہ بھی بتایا کہ وہ ابو سے نفرت کرتی ہیں۔ میری بڑی بہن امی ابو کے ساتھ رہنے لگی، لیکن اب امی اس کے ساتھ بھی لڑنا شروع ہو گئیں حتی کے اپنا کھانا پینا تک علحدہ کر لیا ہے۔ مفتی صاحب، ہم بہنیں ماں سے بہت محبت کرتے ہیں، وہ ہمیشہ سے ایسی نہیں تھیں، وہ ہمارے دوستوں کی طرح ہوتی تھیں، لیکن اب ہر وقت ہر کسی سے لڑتی رہتی ہیں۔ وہ ہم بہنوں سے لڑتی ہیں اور گھر سے کسی سے کچھ کہے بغیر نکل جاتی ہیں۔ ہمارے والد کو ان کو ڈھونڈ کر واپس لانا پڑتا ہے۔ اس تمام صورتحال کی وجہ سے میری بہنوں کے گھر میں بھی لڑائیاں شروع ہو گئیں ہیں۔ بہنوئیوں نے باتیں بنانا شروع کر دیں ہیں۔ براہِ مہربانی اس مسئلہ کا کچھ حل بتا دیں کہ ہمارے گھر میں سکون اور چین آجائے۔

 

 

الجواب وباللہ التوفیق

والدین چاہے کتنے ہی ناراض کیوں نہ ہوں ان کے ساتھ نرمی ، محبت اور اخلاق سے پیش آئیں،ان کی ضروریات کا خیال رکھیں،گھر میں تعلیم کا ماحول بنائیں،نیزسات سو چھیاسی مرتبہ بسم اللہ الرحمن الرحیم پڑھ کر پانی یا شکر پر دم کرکے کے والدین کو پلاتے رہیں۔اور چلتے پھرتے یا سبوح یا قدوس یا غفور یا ودود کا ذکر کرتے رہیں۔

فقط واللہ اعلم بالصواب