Thursday | 21 November 2019 | 24 Rabiul-Awal 1441

Fatwa Answer

Question ID: 490 Category: Permissible and Impermissible
Insurance Halal or Haram

Assalamualaikum

I own a home and two cars and I am dealing with following types of insurances:

1- Car insurance. Among the two types liability and full insurance which one is allowed?

2-Home insurance, I have to maintain insurance per my house loan requirements, what is shariah ruling

3- Medical insurance- I know there are ways to avoid medical insurance without penalties in tax. The question is whether it is halal or not. Some people do not take medical insurance and accept risk of large bills of medical expenses. What is shariah ruling?

Please guide in the light of Quran and Sunnah.

Jazakallah

الجواب وباللہ التوفیق

There is room to have insurance in the countries where it is legally mandatory to have medical insurance or insurance for the vehicles, or home. But this should be borne in mind that the insurance due to being comprising of interest and gambling is in its origin impermissible and Haram. Therefore, if there is a need to have insurance due to legal compulsion then a person should only have this much insurance that one would avoid legal penalties.

 واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 490 Category: Permissible and Impermissible
انشورنس حلال یا حرام

السلام علیکم

میرا  ایک گھر اور دو گاڑیاں ہیں، میرا سوال مندرجہ ذیل انشورینس  کے بارے میں ہے، جس سے میرا  بھی سابقہ پڑا ہے:

۱)گاڑیوں کی انشورینس: لائبلٹی (حادثے کی صورت میں مخالف فریق کو ادائیگی)پوری کوریج (دونوں فریقوں کو رقم کی ادائیگی ، چوری ،آگ لگ جانے وغیرہ  ہر صورت میں مجھے گاڑی کی قیمت کی ادائیگی) ان دونوں میں سے کون  سے شرعاً جائز ہے؟

۲)گھر کی انشورینس: مجھے گھر قرض پر خریدنے کے معاہدہ کے مطابق یہ انشورینس رکھنا  لازمی ہے، اس پر شر عی حکم کیا ہے؟

۳)میڈیکل انشورینس ، مجھے ایسے طریقوں کا علم ہے جس کے ذریعے ٹیکس میں  جرمانے ادا کئے بغیر میڈیکل انشورنس سے بچا جاسکتا ہے۔

میرا سوال یہ ہے کہ میڈیکل انشورینس رکھنا حلال ہے یا نہیں؟ کچھ لوگ میڈیکل انشورینس  نہیں رکھتے ان پر بیمار ہونے کی صورت میں میڈیکل اخراجات کا بہت بڑا بل آنے کا اندیشہ رہتا ہے، اس بارے میں شرعی حکم کیا ہے۔برائے مہربانی قرآن اور سنت کی روشنی میں بتائیے۔

جزاک اللہ

الجواب وباللہ التوفیق

جن ممالک میں  قانونی اعتبار سے گاڑی ، یا گھر ، یا میڈیکل انشورنس کروانا ضروری ہے،وہاں پر اس کی گنجائش ہے، لیکن یہ بات ذہن مین رہنا چاہیےکہ انشورنس سود اور قمار پر مشتمل ہونے کی وجہ سے اصلا ناجائز اور حرام ہے،اس لئے قانونی مجبوری میں اس کو کروانے کی ضرورت پڑجائے تو بقدر ضرورت اتنا ہی انشورنس کروانا چاہیے جس سے ہم قانونی کاروائی سے بچ سکیں۔

واللہ اعلم بالصواب