Sunday | 08 December 2019 | 11 Rabiul-Thani 1441
Gold NisabSilver NisabMahr Fatimi
$4105.41$326.22$815.55

Fatwa Answer

Question ID: 551 Category: Social Dealings
Refrain from mistrust and suspicion

Assalamualaikum,

I asked question ID 487. 

Is it better for me to stop thinking about all that altogether and should I keep my mouth shut? 

(It is almost impossible for me to do otherwise.. my dad is very pious. I dont think he would ever do that. If he finds out that I thought this about him, the relationship between us would be soured for life. 

Something more important to note here is that in most cases I am extremely shakki. I think thousands of things about things. It's quite possible I was just thinking it myself.)

What is the hukm here? 

For myself my heart is toward not doing anything.. 

I await your reply.

Jazakallah

 

 

 

الجواب وباللہ التوفیق

Yes, have good expectation towards your father, stop thinking about it, and practice on the other advices given before.

واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 551 Category: Social Dealings
بدگمانی سے بچیں

السلام علیکم

آپ نے میرے سوال نمبر ۴۸۷ کا جواب دیا۔ کیا یہ میرے لیے بہتر ہے کہ میں اس بارے میں سوچنا بالکل بند کردوں اور میں اپنا  منہ بالکل بند رکھوں ( میں اس کے برخلاف قطعاً کچھ اور نہیں کرسکتی ۔۔ میرے والد بہت متقی ہیں، میرا نہیں خیال کہ وہ کبھی بھی ایسا کریں گے۔ اگر  انہیں پتہ چل گیا کہ میں نے ان کے بارے میں ایسا سوچا ہے تو ہمارے درمیان  تعلقات ہمیشہ کے لیے خراب ہوجائیں گے۔ یہاں ایک اور چیز جو بہت قابل توجہ ہے کہ زیادہ تر معاملات میں  میں بہت شکی مزاج ہوں، میں مختلف  معاملات میں ہزاروں چیزیں سوچتی ہوں، یہ بہت  ممکن  ہے کہ میں بر خود ایسا سوچ رہی تھی)۔

یہاں کس حکم کا اطلاق ہوگا؟ جہاں تک میرے  دل کا تعلق ہے ،میرا خیال ہے کہ مجھے کچھ نہیں کرنا چاہیے۔

 

الجواب وباللہ التوفیق

جی آپ اپنے والد سے حسنِ ظن رکھیں ،اس بارے میں سوچنا چھوڑدیں ،اور اس سےقبل مزید جو ہدایات دی گئیں تھیں ان پر عمل پیرا رہیں۔

والسلام