Monday | 03 August 2020 | 13 Dhul-Hajj 1441
Gold NisabSilver NisabMahr Fatimi
$5562.28$479$1197.49

Fatwa Answer

Question ID: 943 Category:
Ayurveda

Assalamualaikum,

I recently consulted an Ayurvedic practioner of medicine to improve my health. They ask you questions and assign you  a dosha. Then, you are given recommendations based on your body composition and dosha balance. Is this haram ? May I continue to eat foods that are a part of my dosha, continue to engage in practices that pertain to Ayurveda, or use its terminology? Ayurveda itself has roots in Hinduism and Buddhism. 

الجواب وباللہ التوفیق

Exercise in itself is an important and beneficial activity and one should be particular about it for the betterment of health, however, find about the terms by providing the detail about them. The medicines can be used if impure or Haram ingredients are not included. If you have any doubt then you should use some other alternative mode of treatment.

واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 943 Category:
آیوروید طریقہ علاج

میں نے حال ہی میں ایک آیورویدک علاج کرنے والے سے اپنی صحت بہتر بنانے کے لیے مشورہ کیا ، وہ مریض سے سوال کرتے ہیں اور اس کے لیے ایک دوشا تجویز کرتے ہیں، پھر وہ جسم کے تناسب اور دوستے کے مطابق علاج تجویز کرتے ہیں ۔کیا یہ حرام ہے ؟ کیا میں اپنے دوشے کی غذائیں کھاتا رہوں، آیورویدک کی تجویز کردہ ورزشیں کرتا  رہوں اور اس کی اصطلاحات استعمال کرتا رہوں ؟ آیورویدک کی بنیاد ہندوازم اور بدھ ازم میں ہے۔

الجواب وباللہ التوفیق

ورزش فی نفسہ ایک اہم اور مفید چیز ہے ،صحت کی بہتری کیلئے اہتمام کرنا چاہیے ،البتہ اصطلاحات وغیرہ سے متعلق آپ مکمل تفصیل بیان کرکے مسئلہ معلوم کریں ،دواؤں میں اگر ناپاک  یا حرام اجزا شامل نہ ہوں تو استعمال کرسکتے ہیں ۔ اگر آپ کو شبہ ہو تو دیگر متبادل طریقہ علاج اختیار کریں ۔

واللہ اعلم بالصواب